03 September 2014

An error occured during parsing XML data. Please try again.

What do you think about news on site ?






Results

English Afrikaans Albanian Arabic Armenian Azerbaijani Basque Belarusian Bulgarian Catalan Chinese (Simplified) Chinese (Traditional) Croatian Czech Danish Dutch Estonian Filipino Finnish French Galician Georgian German Greek Haitian Creole Hebrew Hindi Hungarian Icelandic Indonesian Irish Italian Japanese Korean Latvian Lithuanian Macedonian Malay Maltese Norwegian Persian Polish Portuguese Romanian Russian Serbian Slovak Slovenian Spanish Swahili Swedish Thai Turkish Ukrainian Urdu Vietnamese Welsh Yiddish

سندھ بینک کا سود سے پاک اسلامک بینکاری نظام کا آغاز

کراچی سندھ بینک نے سود سے پاک بینکاری نظام کے لیے اسلامک بینکاری کا آغاز کردیا۔سود سے پاک اسلامی بینکاری نظام کو فروغ دینے کے لیے سندھ بینک کی پہلی اسلامک بینکاری برانچ سعادت کا افتتاح کیا گیااس موقع پر اسلامک بینکنگ کے سربراہ سعید الدین خان کا کہنا تھاکہ اسلامک بینکاری کو فروغ دیناحوصلہ افزاء ہے ۔ اس موقع پرسندھ بینک کے صدر بلال شیخ کا کہنا تھا کہ سندھ بینک کی سودسے پاک اسلامک بینکاری کے حوالے سے مزید چار برانچز عنقریب کھولی جائیں گی، بلال شیخ کا کہنا تھا کہ برانچوں کے قیام کا مقصد اسلامک بینکاری میں حائل رکاوٹوں کودور کرنا ہے

کسان تنظیموں نے کراپ انشورنس اسکیم کولاحاصل قراردیدیا

کراچی:کسان تنظیموں نے کراپ انشورنس اسکیم کو لاحاصل قراردیدیا ، اسکیم سیاسی مقاصد کیلئے استعمال ہونے کا اندیشہ ہے ،حکومت نے آئندہ مالی سال بجٹ میں کراپ انشورنس کی مد میں ڈھائی ارب روپے مختص کئے ہیں۔ ادھرماہرین اورکسان تنظیموں نے اسے لاحاصل قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ،، حکومت کے پاس اہل کسانوں کے تعین کیلئے کوئی حکمت عملی نہیں ہے۔ اسکیم کے سیاسی مقاصد کیلئے استعمال کئے جانے کا اندیشہ ہے۔ کسان بورڈ کے چئیرمین سرفرازاحمد خان کا کہنا ہے کہ انشورنس اسکیم کیلئے زرعی ترقیاتی بینک سے لئے گئے قرضے پر دوفیصد اضافی سود ادا کرنا ہوگا۔ جبکہ انشورنس پریمیم ری ایمبرسمنٹ بھی ساڑھے بارہ ایکڑ سے بڑھاکر پچیس ایکڑ کردی گئی ہے۔ وزیر خزانہ نے بجٹ تقریر میں دعوٰی کیا تھا کہ کرا پ انشورنس اسکیم سے سات لاکھ کسان خاندان مستفید ہوں گے۔

بلوچستان اسمبلی :2 کھرب 14 ارب روپے کے بجٹ کی منظوری

کوئٹہ بلوچستان اسمبلی نے آئندہ مالی سال دو ہزار چودہ پندرہ کیلئے دو کھرب چودہ ارب روپے سے زائد کے بجٹ کی منظوری دیدی، تعلیم کیلئے اٹھائیس ارب اور صحت کیلئے چودہ ارب روپے مختص کر دیئے گئے۔ اسپیکر جان محمد جمالی کی زیر صدارت بلوچستان اسمبلی کے اجلاس میں مشیر خزانہ خالد لانگو نے ایوان میں پچپن مطالبات زر پیش کیے، جن کو منظور کرلیا گیا ، آئندہ مالی سال کیلئے دو کھرب چودہ ارب سات کروڑ روپے سے زائد کے بجٹ کی منظوری دی گئی، جس میں ترقیاتی اخراجات کیلئے پچاس ارب چہیتر کروڑ سے زائد جبکہ غیر ترقیاتی اخراجات کیلئے ایک کھرب تیرسٹھ ارب روپے سے زائد رقم مختص کی گئی، تعلیم کیلئے اٹھائیس ارب، صحت کیلئے چودہ ارب جبکہ قانون نافذ کرنیوالے اداروں کیلئے سترہ ارب پچیس کروڑ روپے کی منظوری دی گئی۔

Page 1 of 280

Activities
X
Chat
X
Your Status: 
Available
Please login to be able to chat.
Chat (0)